امتِ مسلمہ کی دعوتی، علمی اور تہذیبی تاریخ ایڈوانسڈ کورسز

Course Added: 03 Mar, 2016

یہ کورس امت کی دعوت، علمی و فکری تحریکیں اور سیاست و معاشرت اور مکمل تہذیب کی تاریخ سے متعلق ہے۔ اس کورس میں ہم مسلم تہذیب کی بنیاد رکھنے والے پیغمبر سیدنا آدم علیہ السلام سے کر موجودہ مسلم تہذیب تک کی تاریخ کا مطالعہ کریں گے۔ یہ کورس کم بیش 7 ماڈیولز پر مشتمل ہے۔

مسلم گروہوں کا تقابلی مطالعہ ایڈوانسڈ کورسز

Course Added: 04 Feb, 2016

اس کتاب کا مقصد یہ ہے کہ امت مسلمہ کے مختلف گروہوں اور مکاتب فکر کے مابین جو اختلافات پائے جاتے ہیں، ان کا ایک غیر جانبدارانہ (Impartial)مطالعہ کیا جائے اور ان کے نقطہ نظر کے ساتھ ساتھ ان کے استدلال کا جائزہ بھی لیا جائے۔ یہ پروگرام ان لوگوں کے لیے ہے جو: • وسیع النظر ہوں • مثبت انداز میں مختلف نقطہ ہائے نظر کو سمجھنا چاہتے ہوں • منفی اور تردیدی ذہنیت کی رو سے مطالعہ نہ کرتے ہوں • دلیل کی بنیاد پر نظریات بناتے ہوں نہ کہ جذبات کی بنیاد پر • اپنے سے مختلف نظریہ کو کھلے ذہن پڑھ سکتے ہوں اور اس میں کوئی تنگی اپنے سینے میں محسوس نہ کرتے ہوں اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ آپ میں یہ خصوصیات موجود ہیں، تو آپ کا تعلق خواہ کسی بھی مکتب فکر سے ہو، آپ اس پروگرام میں شامل کتب کا مطالعہ کر سکتے ہیں۔ اگر آپ سمجھتے ہیں کہ یہ خصوصیات آپ میں موجود نہیں ہیں، تو پھر یہ سلسلہ ہائے کتب آپ کے لیے نہیں ہے۔

آسان عربی گرامر ایڈوانسڈ کورسز

Course Added: 03 Feb, 2016

عربی زبان سیکھنے کے لئے 'آسان عربی گرامر' کے انتخاب کا بہت بہت شکریہ۔ اس پروگرام میں ان شاء اللہ ہم متعدد ماڈیولز کے ذریعے عربی زبان سیکھیں گے۔ اس پروگرام کے اختتام پر ان شاء اللہ آپ قرآن و حدیث اور مسلم علماء کی عربی کتب کے مطالعے پر قادر ہو جائیں گے۔ اس پروگرام کو اس طرح سے ڈیزائن کیا گیا ہے کہ آپ نہایت ہی آسانی کے ساتھ درجہ بدرجہ ادبیات اسلامیہ میں استعمال ہونے والی عربی زبان سیکھ سکتے ہیں۔

تعمیر شخصیت ایڈوانسڈ کورسز

Course Added: 02 Feb, 2016

انسانی شخصیت کے مختلف پہلو ہیں: اخلاقی، روحانی، علم ودانش، سماجی اور دعوتی و اصلاحی۔ انہی پانچ پہلوؤں کو ہم نے اس پروگرام میں کور کرنے کی کوشش کی ہے۔ ہماری کوشش یہ ہے کہ علوم دینیہ کے طالب علموں کی شخصیت میں ان پانچوں پہلوؤں کا تزکیہ کر کے انہیں ایک بہترین شخصیت کی تعمیر میں مدد کی جائے۔ ا

علوم الفقہ ایڈوانسڈ کورسز

Course Added: 20 Jan, 2016

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم دین کا ماخذ قرآن و سنت ہے۔ جس وقت قرآن و سنت میں بیان کردہ احکام کو سمجھ کر ان کا اطلاق زندگی میں پیش آنے مسائل پر کیا جا تا ہے تو اس سے علم فقہ وجود میں آتا ہے۔ لفظ ’’فقہ‘‘ کا مطلب ہے سمجھنا اور علم فقہ کے ماہر کو ’’فقیہ (جمع فقہا)‘‘ کہا جاتا ہے۔ جب ایک فقیہ کے سامنے عملی زندگی کا کوئی سوال درپیش ہوتا ہے اور وہ اس معاملے میں دین سے راہنمائی حاصل کرنا چاہتا ہے تو وہ قرآن و سنت میں غور و فکر کرتا ہے اور ان کے احکام کی روشنی میں اس مسئلے کا حل تلاش کرتا ہے تو اس کے نتیجے میں ’’علم فقہ‘‘ وجود پذیر ہوتا ہے۔ عہد رسالت سے لے کر آج تک ایک عظیم فقہی روایت مسلمانوں کے ہاں موجود رہی ہے اور فقہا نے اس میں بے شمار کتابیں تصنیف کی ہیں جن میں سے بہت سی کتب بیسیوں جلدوں پر مشتمل ہیں۔ علم فقہ کا تعلق پریکٹیکل زندگی سے ہے۔ ’’مطالعہ فقہ پروگرام‘‘ کا مقصد یہ ہے کہ ہم امت مسلمہ کے اس عظیم ذخیرے سے واقفیت حاصل کریں۔ یہاں ہم یہ واضح کر دینا چاہتے ہیں کہ اگر آپ علمی کتب کے مطالعے کا ذوق نہ رکھتے ہوں اور کتابوں کی موٹائی آپ کو خوفزدہ کر دیتی ہو تو پھر یہ پروگرام آپ کے لئے نہیں ہے۔ اس پروگرام کے مخاطب وہی لوگ ہیں جن میں مطالعے کا زبردست رجحان پایا جاتا ہو۔ اگر آپ نے اپنی زندگی کا مقصد اللہ کے دین کی علمی خدمت کو بنا لیا ہے تو پھر آپ کو کتابوں سے تعلق قائم کرنا ہو گا۔ مطالعے کا ذوق اپنے اندر پروان چڑھانا ہو گا، ذہن کو تجزیاتی مطالعے کا عادی بنانا ہو گا اور کھلے ذہن کے ساتھ دیگر لوگوں کے علمی کام کا تنقیدی مطالعہ کرنا ہو گا۔ اس کا اجر آپ کو آخرت میں اللہ تعالی کی رضا کی صورت میں ضرور ملے گا اور جنت میں آپ کا مقام عام لوگوں سے کہیں بلند ہو گا، ان شاء اللہ۔ مطالعہ فقہ پروگرام کی تیاری ہمارے کولیگ محترم محمد شکیل عاصم صاحب اور محمد مبشر نذیر صاحب نے مل کر کی ہے۔ اس کورس کی خصوصیات • عام طور پر فقہی کتب، قدیم اور مشکل اسلوب میں لکھی جاتی ہیں۔ ان میں جدید ذہن رکھنے والے قارئین کا خیال نہیں رکھا جاتا ہے۔ اس سیریز میں فقہی مباحث کو دور جدید کے آسان اسلوب میں بیان کیا گیا ہے۔ • عام فقہی کتب میں صرف احکام بیان کر دیے جاتے ہیں، ان کی حکمت و فلسفہ بیان نہیں کیا جاتا۔ اس سیریز میں آپ کو فقہی احکام کے ساتھ ساتھ اس کی حکمت، فلسفہ، منطق (Logic) اور دلائل بھی ملیں گے۔ اس کورس کو اس طریقے سے ڈیزائن کیا گیا ہے کہ آپ کو فقہا کے طریق استدلال سے واقفیت حاصل ہو سکے گی۔ • اس کورس میں ہماری کوشش ہو گی کہ آپ کی فقہی صلاحیتوں کو جلا بخشی جائے اور اس کورس کے اختتام پر آپ اس پوزیشن میں ہوں کہ مختلف فقہا کی آرا اور دلائل کا جائزہ لے کر اپنی رائے قائم کر سکیں۔ • عام طور پر فقہی کتب کسی خاص مسلک اور مکتب فکر کے مطابق لکھی جاتی ہیں۔ اس پروگرام میں ہم نے کوشش کی ہے کہ مسلمانوں کے تمام مکاتب فکر کو اپنی مشترکہ علمی میراث سمجھتے ہوئے ان کا تقابلی مطالعہ کروایا جائے اور ان کے دلائل کو پرکھ کر صحیح رائے تک پہنچنے کی تربیت دی جائے۔ اس کورس کا استعمال علم التعلیم کے میدان میں ہونے والی مختلف تحقیقات سے یہ بات ثابت ہوئی کہ عام ذہانت کا حامل انسان جو کچھ سنتا ہے ، وہ اس کا 30 سے 40 فیصد یاد رکھتا ہے؛ جو کچھ وہ دیکھتا ہے، اس کا 60 تا 70فیصد اس کے ذہن میں راسخ ہو جاتا ہے اور جو کچھ وہ عملاً کرتا ہے، اس کا 80 سے 90 فیصد وہ سیکھ لیتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہم نے اس پروگرام میں ایسا طریقہ اختیار کیا ہے جس میں طالب علم کو فقہ پر عملی کام کرنا پڑے۔ ہر باب کے اختتام پر اسائن منٹس دی گئی ہیں ۔ اپنے جوابات کے لئے ایک اسائنمنٹ بک تیار کیجیے۔ بہتر ہو گا کہ آپ یہ سب کسی ورڈ فائل میں لکھیے۔ بصورت دیگر آپ ہارڈ کاپی کی صورت میں بھی اپنے جوابات لکھ سکتے ہیں۔ کورس کے حصے اور ابواب یہ ابتدائی ماڈیول دین کے بنیادی احکامات کے بارے میں فقہی مسائل پر مشتمل ہے۔ ہم نے اس کتاب میں گیارہ ابواب کے تحت بنیادی فقہی مسائل کو بیان کیا ہے جن میں طہارت، نماز، عبادات، معیشت ، عائلی زندگی اور خور و نوش سے متعلق احکامات شامل ہیں۔

تفاسیر کا تقابلی مطالعہ ایڈوانسڈ کورسز

Course Added: 11 Jan, 2016

دنیا بھر کے مسلمانوں کا اس بات پر اتفاق رائے ہے کہ قرآن مجید اللہ تعالی کی آخری کتاب ہے۔ لاکھوں مسلمان اس کتاب کو مکمل طور پر حفظ کرتے ہیں۔کم و بیش ہر مسلمان کو اس کتاب کا کچھ حصہ تو یاد ہوتا ہی ہے۔ ان کی اکثریت اس کی روزانہ تلاوت کرتی ہے۔ رمضان میں تو خاص طور پر سب ہی مسلمانوں کا تعلق اس کتاب سے مضبوط ہو جایا کرتا ہے۔ غیر عرب مسلمانوں کے ہاں یہ عام رجحان رہا ہے کہ یہ لوگ قرآن مجید کے معانی کو سمجھے بغیر اس کی تلاوت کیا کرتے ہیں۔ ہمارے ہاں لوگ محض ثواب کے حصول کے لئے تو تلاوت کرتے ہیں مگر قرآن مجید کی دی ہوئی ہدایت کو نظر انداز کر دیا کرتے ہیں۔ جیسی شخصیت، اخلاق اور کردار قرآن تشکیل دیتا ہے، لوگ اسے چھوڑنے کے باعث راہ راست سے بھٹک جاتے ہیں۔ اس کا نتیجہ یہ نکلتا ہے کہ لوگ قرآن پڑھتے ہیں مگر ان کا کردار شیطان کے پیروکاروں جیسا ہوتا ہے۔ اللہ تعالی کا شکر ہے کہ اب یہ رجحان تبدیل ہو رہا ہے۔ مسلمانوں کا جدید تعلیم یافتہ طبقہ قرآن مجید کی طرف لوٹ رہا ہے۔ نہ صرف مسلمان بلکہ غیر مسلم بھی قرآن کا مطالعہ کر رہے ہیں۔ یہ وہ کتاب ہے جس نے چودہ صدیوں میں بلا مبالغہ اربوں انسانوں کی زندگی کو تبدیل کیا ہے۔ قرآن مجید عربی زبان میں ہے۔ غیر عربوں کے لئے قرآن کو سمجھنے کا سادہ طریقہ یہ ہے کہ وہ اس کا ترجمہ پڑھنا شروع کر دیں۔ یہ طریقہ ان لوگوں کے لئے مفید ہے جو قرآن کے مضامین سے محض تعارف حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ ایسے افراد جو اپنی زندگیوں کو دین کی دعوت و تبلیغ کے لئے وقف کرنا چاہیں، ان کے لئے لازم ہے کہ وہ قرآن مجید اور اس سے متعلقہ علوم جیسے حدیث، فقہ، تاریخ، اخلاقیات، فلسفہ اور الہیات کا گہرا مطالعہ کریں۔ یہ ڈپلومہ کورس ایسے ہی لوگوں کے لئے تیار کیا گیا ہے۔

ہمارے شراکت دار